جنوبی وزیرستان سیلابی ریلے، 8 افراد جاں بحق، لواحقین کے لیئے امداد کا اعلان۔ ایف ڈی ایم اے

ww.jpg

پشاور: فاٹا ڈیزاسٹر مینجمینٹ اتھارٹی ( ایف ڈی ایم اے ) جنوبی وزیرستان میں سیلابی ریلے سے ہونے والے نقصانات کی تفصیلات جاری کرتے ہوئے پورے قبائلی خطے کیلئے ریڈ الرٹ بھی جاری کردی جبکہ ڈپٹی کمشنر جنوبی وزیرستان کو ایک خط کے ذریعے ہر جاں بحق فرد کے لواحقین کو فی کس مبلغ تین لاکھ اور زخمیوں کو فی کس ایک ایک لاکھ روپے دینے کی ہدایت بھی کی گئی ہے۔

ایف ڈی ایم اے کے ترجمان کے مطابق گذشتہ روز قبائلی ضلع جنوبی وزیرستان کے وانا سب ڈویژن میں وچہ خوڑہ الگاڈ( ندی ) میں سیلابی ریلے کی وجہ سے دو مخلتف واقعات میں دو خانہ بدوش بچوں سمیت چھ مقامی خواتین جاں بحق ہو گئیں جبکہ مقامی انتظامیہ اور لیویز فورس کے اہلکاروں نے فوری طور پر دوتانی خانہ بدوش قبیلے کے چار افراد اور ندی میں پھنسے ہوئے گاڑی میں سوار تین بچوں اور ایک خاتون کو بروقت بچالیا گیا ۔ ایف ڈٰ ی ایم اےکی طرف سے جاری ہونے والے اعلامیے کے مطابق جنوبی وزیرستان میں گذشتہ روز وچہ خوڑہ نامی ندی کے کنارے رہائش پذیر دوتانی قبیلے کے خانہ بدوش خاندان کے دو بچےسیلابی لہروں میں بہہ گیئے جبکہ ایک دوسرے واقعے میں ایک بینجو گاڑی میں سوار چھ خواتین بھی سیلابی لہروں کا شکار ہو گئیں جبکہ تین بچوں اور ایک خاتون کو بچا لیا گیا ۔
اس دوران ایف ڈی ایم اے نے تمام قبائلی علاقوں کیلئے اگلے تین دن تک شدید بارشوں اور طغیانی کے ساتھ ساتھ طوفانی ہواؤں کیلئے الرٹ بھی جاری کردیا ہے ۔ ڈی جی ایف ڈی ایم اے سہیل خان نے اپنے تمام قبائلی اضلاع میں متعین کوارڈینیٹرز کو سختی سے ہدایات جاری کی ہیں اور مرکزی دفتر میں قائم کنٹرول روم کو بھی 24/7 چوکس رہنےکی ہدایات کی ہیں ۔ساتھ ہی جنوبی وزیرستان میں مرنے والوں کی تفصیلات طلب کی ہیں تا کہ انہیں جلد از جلد معاوضوں کی ادائیگی کو بھی یقینی بنا یا جائے ۔