بھارت میں 20 سالہ لڑکی کے ساتھ 12 افراد کی اجتماعی زیادتی

rape.jpg

بھارت کی ریاست لودھیانہ میں 20 سالہ نوجوان لڑکی کو 12 افراد نے اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنا دیا ہے ۔

بھارتی ویب سائٹ ’ ٹائمز آف انڈیا ‘ کے مطابق اجتماعی زیادتی کا نشانہ بننے والی نوجوان لڑکی اپنے دوست کے ہمراہ ’ چاکلیٹ ڈے ‘ منانے کیلئے ہفتے کی رات گاڑی پر سیر کیلئے نکلے تھے کہ راست میں پانچ موٹر سائیکل سواروں نے ان کی گاڑی پر پتھر مار کر انہیں ایک پل پ روک لیا ۔

گاڑی رکوانے کے بعد تمام ملزمان نے لڑکی کو گاڑی سے اتارا اور اغواءکر کے اپنے ساتھ ایک خالی پلاٹ میں لے گئے جہاں انہوں نے مزید سات ساتھیوں کو بھی بلا لیا اور مسلسل جنسی زیادتی کا نشانہ بناتے رہے ۔گینگ ریپ کے بعد ان ملزمان نے لڑکی کے دوست کو کال کر کے بلایا اور ایک لاکھ روپے تاوان طلب کیا ۔

متاثرہ لڑکی نے پولیس کو بیان دیتے ہوئے کہا کہ جب اسے لینے کیلئے کوئی بھی نہیں آیاتو ملزما ن نے گاڑی کی چابی دی اور اسے جانے کیلئے کہا اور خود وہاں سے فرار ہو گئے ۔متاثرہ خاتون کی شکایت پر پولیس نے نامعلوم ملزمان کو مقدمے میں نامزد کرلیا تاہم انہیں شناخت نہیں کیا جاسکا۔

دوسری جانب انڈیا ٹو ڈے کی رپورٹ کے مطابق خاتون کی بازیابی کے لیے ملزمان نے 2 لاکھ روپے کی رقم طلب کی تھی۔رپورٹ میں یہ بھی بتایا گیا کہ ابتدا میں خاتون تھانے میں واقعے کی اطلاع دینے گئیں تو موقع پر موجود پولیس افسر نے ان کی شکایت پر کسی قسم کی کارروائی نہیں کی۔متاثرہ خاتون کی جانب سے مذکورہ پولیس افسر کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کیا گیا۔